» English » فارسی
» Français » العربية
» русский » اردو
 
 
 
صفحه اصلی > ہمارے بارے میں  > مشن  

المصطفی(ص)انٹر نیشنل یونیورسٹی قیمتی تجربوں اور چند صدیوں کی بے نظیر محصولات اور نتیجوں کی مدد سے ممتاز علماء اور قرآنی ہدایت کے علمبردار اور اسلامی ثقافت کے نظریہ کے حامل اور عصر حاضر کے مفکرین کی تربیت کے لئے اسلامی با عظمت انقلاب کی کامیابی کے بعدتاسیس ہوئی ہے ۔

یہ علمی اور بین الاقوامی ادارہ نے کہ جو پیغمبر رحمت خاتم الانبیاء حضرت محمد مصطفی(ص)کے اسم گرامی سے درخشاں ہے جس کے فرائض میں الٰہی معارف (کلچر) کے زلال کے پیاسوں کی پیاس بجھانے اور اسلامی نظریات کو وسیع اور عام کرنے میں جدید تحریک کو اپنی علمی مجاہدتوں کا پہلا ہدف اور نصب العین قرار دیا ہے ۔

اس علمی ادارہ کے اغراض و مقاصد مندرجہ ذیل ہیں :

۱۔ پارسا اور متقی مبلغین ، مدرسین ، محققین اور مجتہدین کی تربیت ۔

۲۔ حقیقی اسلامی تعلیمات پر مبنی خالص اسلام محمدی کی نشرو اشاعت ۔

 المصطفی(ص) یونیورسٹی کی ان اہداف تک رسائی کے لئے اہم ترین علمی پالسیوں کو مندرجہ ذیل موارد میں اشارہ کیا جا سکتا ہے :

سافٹ ویئر کی تحریک کا اہتمام ،علم و فکر کی ایجاد اور اسلامی مآخذ کو دوسری زبانوں میں منتقل کرنے کی تحریک ۔

تربیت اور تحقیق پر مبنی فعالیت اپنانا

اندرونی اور بیرونی معاملات میں انسانی کرامت کی حفاظت

اسلامی اتحاد اور انسجام کی پالیسی کے تحت اسلامی مذاہب کے حدود (مملکت) کا احترام

اب تک دنیا کے ۱۰۸/ملکوں سے ۳۴۰۰۰/ہزارسے زیادہ طلاب و طالبات اس علمی اور تعلیمی ادارہ (یونیورسٹی)میں قبول ہوچکے ہیں کہ ان میں سے ۶۰۰۰/ہزار سے زیادہ افراد گوناگوں تعلیمی سطح سے فارغ التحصیل ہوئے اور اپنے ملک واپس جاکر علمی تحقیقی اور ثقافتی مراکز میں فعالیت کر رہے ہیں اس وقت تقریباً ۱۸۰۰۰/ہزارطلاب اور طالبات المصطفی(ص)یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں کہ ان میں ۱۰۰۰۰/افراد ایران میں اور ۸۰۰۰/بیرون ملک المصطفی(ص)یونیورسٹی کی برانچوں میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں ۔

المصطفی(ص)یونیورسٹی نے طلاب کی تعلیم کے ساتھ ساتھ تعلیم و تربیت کی عاشق و دلدادہ پوری دنیا کی تعلیم و تربیت کا شوق رکھنے والی خواتین کی تعلیم کا بھی بندو بست کیا ہے ۔

 مختلف ممالک کی کہ اس وقت ۲۰۰۰/سے زیادہ طالبات بنت الھدی کالج اور الزھراء یونیورسٹی ، نرجس کالج اور بیرون ملک المصطفی ؐیونیورسٹی کے برانچوں میں تعلیم حاصل کر رہی ہیں ۔

المصطفی(ص)یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کرنے کے خواہاں افراد بین الاقوامی تعلیمی اعلی معیار کے مطابق ڈیپلوما کورس ، بی اے ، ایم اےاور ڈاکٹریٹ کے کورس نیز حوزہ یعنی اسلامی یونیورسٹی کی چہار گانہ سطحوں اور اجتہاد کے کورس کے لئے پوری دنیا سے قبول کئے گئے ہیں پھر فارسی اور عربی زبان جاننے کے بعد اسلامی اور انسانی علوم کے مختلف تعلیمی میدانوں میں کالجوں ، اعلی تعلیمی اداروں اور ایران اور بیرون ملک کی وابستہ برانچوں میں تعلیم حاصل کرتے ہیں اور اس کورس کو تمام کرنے کے بعد المصطفی(ص)یونیورسٹی اور وزارت تعلیم کی رسمی سند حاصل کرتے ہیں ۔

ایران میں المصطفی(ص)یونیورسٹی سے ملحقہ مراکز (برانچیں ) درج ذیل ہیں : (برخی از مراکز وابسطہ جامعۃ المصطفی در ایران )

۱۔ زبان اور اسلامی کلچر کا تعلیمی مرکز

۲۔ امام خمینی یونیورسٹی

۳۔ علوم انسانی (Liberal art humanities )کالج

۴۔ بنت الھدی (خواتین کے لئے ) کالج

۵۔ شارٹ ٹرم کورس اور مطالعاتی فرصت کا ادارہ

۶۔ المصطفی(ص) E-Learning  کالج

۷۔ زبان اور ثقافت کی مہارت کا مرکز  

۸۔امور طلاب اور خانوادوں کا مرکز

۹۔ المصطفی(ص)انٹرنیشنل تحقیقی مرکز

۱۰۔ المصطفی(ص)یونیورسٹی کی تہران ، مشہد ، اصفہان اور گرگان میں برانچیں ۔

المصطفی(ص)یونیورسٹی ۵۰/ سے زیادہ ملکوں میں اپنی برانچ رکھتی ہے کہ غنا میں اسلامی کالج ، اسلامی کالج لندن ، انڈونیزی اور المصطفی(ص)یونیورسٹی افغانستان ، سیریا ، پاکستان ، ہند ، تھائیلینڈ ، تنزانیا اور سری لنکا میں موجود برانچوں کی طرف اشارہ کیا جا سکتا ہے ۔

اسی طرح اعلی تعلیمی مراکز المصطفی ؐیونیورسٹی کے زیر نظر فعالیت کر رہے ہیں کہ ان میں سے بعض درج ذیل ہیں :

آل البیت (ص)یونیورسٹی ، سبطین کالج اور شہید صدر کالج 

المصطفی(ص)یونیورسٹی کی علمی تنظیم کے اراکین اور اساتذہ کہ جو اس وقت ایران اور ایران سے باہر فعالیت انجام دے رہے ہیں تقریبا ۲۰۰۰/افراد ہیں ۔

اس وقت ۱۵۰ Educational Field(تعلیمی میدان ) اور (Tendency ) کے تعلیمی کورس اس مجموعہ میں منظور ہو چکے ہیں کہ ان میں سے بعض مضامین جو اس وقت پڑھائے جا رہے ہیں : فقہ و اصول ، فقہ و اسلامی کلچر ، فقہ معیشتی ، فقہ قضائی ، فقہ خانوادہ ، فقہ معاشرہ ، قرآن و علوم ، فلسفہ اور اسلامی عرفان ، اسلامی کلام ، ثقافت اور اسلامی کلچر ، تاریخ اسلام ، شیعہ شناسی ، ادیان و مذاہب ، اقتصاد ، علوم سماجیات ، تبلیغ و رابطے ، سماجی مطالعے ، سائنسی علوم ، انتظامیہ ، نفس شناسی ، حقوق ، فارسی زبان اور اسلامی کلچر ، زبان اور عربی ادب اور اس کے علاوہ دسیوں اختیاری اور غیر اختیار مضامین ۔

احتیاج کے مطابق کتابوں کی تدوین کی اہمیت اور ضرورت پر نظر کرتے ہوئے نیز روز مرہ کے علم سے استفادہ کرنے کی ضرورت کے پیش نظر المصطفی (ص)یونیورسٹی ابتک تعلیمی اور تعلیم میں معاون تقریبا ۴۰۰/کتابیں تدوین اور فراہم کر چکا ہے ۔

ابتک ۲۳۰۰/ سے زیادہ تھیسز المصطفی(ص)یونیورسٹی میں منظور ہو چکی ہیں اور ان میں سے اکثر کا دفاع بھی ہوچکا ہے ۔

المصطفی(ص)یونیورسٹی ان شائقین کے لئے جو ایران میں نہیں رہتے مجازی یونیورسٹی (E-Learning) انٹرنٹ کے WWW.almustafa.comاڈریس پر تاسیس کر چکا ہے ۔کہ اس وقت دنیا کے دور ترین علاقے سے بہت سارے آئے ہوئے طلاب بی اے، ایم اے اور فارسی زبان ، اسلامی کلچر ، فلسفہ عرفان اسلامی ، فقہ و معارف اسلامی ، علوم قرآن و حدیث فارسی اور انگلش زبان میں مذکورہ مضامین کا درس پڑھ رہے ہیں ۔

ان محققین کے لئے جن کا ایران میں زیادہ دنوں تک رہنا ممکن نہیں ہے شارٹ ٹرم تعلیم کا بندوبست کیا گیا ہے کہ اب تک  عالم اسلام کے ممتاز طالب علموں اور ثقافتی فعالیت کرنے والوں کے لئے ۶۰/دورہ سے زیادہ منعقد کیا جا چکا ہے۔

 ۹۸۵/محقق اور مترجم کی شناسائی اور ان کی معلومات کا ذخیرہ ، دستور العمل کی تدوین اور انھیں سرو سامان دینا تحقیقی فعالیتوں میں شمار ہوتا ہے اس سلسلہ میں ۴۶۱۹/عنوان اثر کہ جو کتاب ، مقالہ ، تھیسز اور ترجمہ پر مشتمل ہے اور محققین کا ترجمہ ۴۳/ زبان میں زیور طبع سے آراستہ ہوا ہے ۔

تحقیقی اور علمی نشستوں کا انعقاد ، ۲۳/علمی انجمنوں کی فعالیت ، خبر رساں متعدد اخبار و رسالے اور ۵۰ عنوان پر علمی اور مہارتی ایران اور بیرون ایران رسالہ کا اجراء اور سالانہ شیخ طوسی نامی علمی اور تحقیقی بین الاقوامی نمائش کا انعقاد اور اسی طرح المصطفی(ص)کے بین الاقوامی مرکز تحقیق کی تاسیس المصطفی(ص)یونیورسٹی کی دوسری تحقیقی فعالیت شمار ہوتی ہے ۔

المصطفی(ص)یونیورسٹی کے پریس نے ابتک مختلف اسلامی اور انسانی علوم کے متعدد موضوعات پر درسی کتاب گوناگوں زبانوں میں شائع کیا ہے ۔

اخلاقی اور روحانی ترقی کے لئے مناسب ماحول فراہم کرنا ، سبب اور نشاط پیدا کرنا ، تعلیمی ، ثقافتی ، سماجی اور تربیتی امور کے اہتمام کی طرف توجہ ، تفریحی سفر ، مراسم اور قرآنی اور ورزشی مقابلے اور سالانہ جشن طوبیٰ کا انعقاد ، جامعہ کا ثقافتی ، تربیتی، سماجی اہم ترین ترجیحی پروگرام شمار ہوتا ہے  ۔

قومی اور ثقافتی انجمنوں کے قالب میں طلاب کی فعالیت ۸۰/ سے زیادہ انجمنوں کی تشکیل نےایران اور دیگر ممالک میں تمرکز پاکر بہت سارے مطبوعات اور اخبار جیسی خدمات پیش کی ہیں ۔

۳۰/عنوان سے زیادہ رسالہ اور مجلہ کی اشاعت اور مختلف زبانوں میں ۸۰/سائٹ سے زیادہ کو عملی جامہ پہنانا طلاب کی اہم ترین فعالیت شمار کر سکتے ہیں ۔

دنیا کے گوناگوں اور مختلف میدانوں میں طلاب کی کامیابی اور کارآمد شرکت عمومی تعلیمات اور عملی مہارت کے علاوہ انھیں ، استعمال کی مہارتوں اورفنون کی بھی تعلیم دی جاتی ہے ۔

غیر ایرانی طلاب کی بیویوں اور بچوں کا المصطفی(ص)یونیورسٹی کے عظیم خانوادہ میں شریک ہونے نے معاشرہ کو ایک قابل قدر موقع فراہم کردیا ہے تا کہ اپنے تعلیمی اور ثقافتی مقاصد کا اجرا کریں ۔ امور طلاب اور خانوادہ کا مرکز نے حضرت فاطمہ (ص)،ریحانہ اور ہجرت جیسے تعلیمی مرکز کی بچوں اور خانوادہ کی تعلیم کے لئے ایجاد کرکے رنگا رنگ اور وسیع پروگراموں کا تدارک کر دیا ہے ۔

طلاب اور خانوادہ کی روحی اور عاطفی ضرورتوں کا جواب دینے کے لئے مشورت کا مرکز اور اسپیشل کلینک کھولی گئ ہے ۔

دنیا کے تعلیمی ، تحقیقی اور ثقافتی مراکزسے رابطہ اور استاد و طلاب کے مفاہمت نامہ پر دستخط کے ساتھ ممتاز طلاب کو تعلیمی امتیاز پر خصوصی شہریہ دے کر مشترک علمی اور تحقیقی کانفرنسیں منعقد کرکے اور دیدار کرنے والی تنظیموں کا تبادلہ المصطفی(ص)یونیورسٹی کی خصوصی توجہ کا موردہے ۔

ایران اور بیرونی ممالک میں یونیورسٹی نے ۵۰ سے زیادہ یونیورسٹیوں اور انٹرنیشنل ثقافتی تنظیم کے مفاہمت نامہ پر دستخط کی ہے ۔ کہ عالم اسلام ایک متحدہ یونیورسٹیوں (کہ جو آئیسکو سے وابستہ ہوں ) کی طرف اشارہ کیا جا سکتا ہے ۔

المصطفی(ص)یونیورسٹی نے فارغ التحصیل طلاب کے لئے انٹرنیٹ پر ایک سائٹ ڈال کر کتاب مجلہ اور گوناگوں مناسبتوں سے پیغام ارسال کرکے ، طلاب سے دائمی رابطہ بر قرار کرنے کی کوشش کی ہے ۔

المصطفی(ص) یونیورسٹی میں قبول ہونے والے ، خصوصی اسکالرشیپ ، تعلیمی امداد ، خوابگاہوں میں رہائشی سہولت ، مجرد افراد کے لئے ہاسٹل کا انتظام کیا گیا ہے اور شادی شدہ کےلئے رہائشی اپارٹمنٹ کا بندوبست ہے نیز وہ  ورزشی ہال ، تفریحی ، زیارتی اور دیگر ثقافتی پروگراموں سے بھی بہرہ مند ہوتے ہیں ۔مکمل جسمی، روحی اور ذہنی سلامتی ، ڈیپلوما کی سند کم سے کم ۱۸/ اور زیادہ سے زیادہ ۲۲ سال عمر اور داخلہ امتحان میں قبولیت اس علمی اور تعلیمی تنظیم میں قبولیت کے شرائط ہیں ۔

جامعہ کے طلاب کی قبولیت جامعہ کی وب سائٹ ،مختلف ممالک میں قبول کرنے والے وفد کے جانے اور دیگر ممالک میں اسلامی جمہوریہ ایران کی نمائندگی کے ذریعہ انجام پاتی ہے ۔

اداری اور ویلفیئر

غیر ایرانی علماءا ور طلاب کی معاشی ، اداری اور کاونسلر جیسے مختلف ابعاد و جوانب میں گوناگوں ضرورتوں کی تکمیل کے لئے امور طلاب اور خانوادہ کے مرکز کی فعالیتوں کو اپنے آپ سے مخصوص قرار دیا ہے ۔ اس مرکز کی کوشش یہ ہے کہ سہولتیں فراہم کرنے میں دقت اور سرعت کی محدودیت  اور اسباب پر نظر رکھتے ہوئے طلاب محترم کی رضایت حاصل کرے ۔